11

گھسلین میکسویل کا دعویٰ ہے کہ جیفری ایپسٹین کو جیل میں قتل کیا گیا تھا۔

گھسلین میکسویل کا دعویٰ ہے کہ جیفری ایپسٹین کو امریکی جیل میں قتل کیا گیا تھا۔
گھسلین میکسویل کا دعویٰ ہے کہ جیفری ایپسٹین کو امریکی جیل میں قتل کیا گیا تھا۔

گھسلین میکسویل نے دعویٰ کیا ہے کہ بدنام زمانہ امریکی فنانسر جیفری ایپسٹین کو جیل میں قتل کر دیا گیا تھا۔

پیر کو نشر ہونے والے ایک برطانوی نشریاتی ادارے کے ساتھ ایک انٹرویو میں، آکسفورڈ سے تعلیم یافتہ آنجہانی برطانوی پریس بیرن رابرٹ میکسویل کی بیٹی ایپسٹین کو لڑکیوں کے ساتھ جنسی زیادتی میں مدد کرنے کے جرم میں سزا اور 20 سال کی سزا کے بعد فلوریڈا کے ایک قید خانے میں قید ہے۔

ایپسٹین، جسے کم عمر لڑکیوں کی اسمگلنگ کے الزامات کا سامنا تھا، اگست 2019 میں نیویارک کی جیل میں خود کو قتل کرکے مقدمے سے بچ گیا۔

پوسٹ مارٹم نے پھانسی پر خودکشی کا نتیجہ اخذ کیا، حالانکہ 66 سالہ شخص کی اچانک موت نے بڑے پیمانے پر تنازعات اور سازشی نظریات کو ہوا دی۔

سابق سوشلائٹ میکسویل نے برطانیہ کے ٹاک ٹی وی پر نشر ہونے والے جیل ہاؤس انٹرویوز کی سیریز میں کہا کہ "مجھے یقین ہے کہ اسے قتل کر دیا گیا ہے۔” "میں چونک گیا۔ پھر میں نے سوچا کہ یہ کیسے ہوا؟”

ایپسٹین کے بھائی کے ذریعہ رکھے گئے ایک فرانزک پیتھالوجسٹ نے 2019 میں کہا تھا کہ شواہد سے پتہ چلتا ہے کہ اسے قتل کیا گیا تھا، اس بحث میں کہ اس کی گردن میں پائے جانے والے متعدد فریکچر "خودکشی کے لیے انتہائی غیر معمولی” تھے۔

امریکی محکمہ انصاف نے ایک سال طویل تحقیقات کی ہے کہ ایپسٹین کس طرح نیویارک کے میٹروپولیٹن اصلاحی مرکز کے اندر خود کو پھانسی دینے میں کامیاب ہوا، لیکن اس نے غلط کھیل کا کوئی ثبوت جاری نہیں کیا۔

ڈیوٹی پر موجود دو جیل گارڈز جنہوں نے اس کی موت کی رات سے متعلق جھوٹے ریکارڈز کا اعتراف کیا تھا ان پر بعد میں 2019 میں اس کی نگرانی کرنے میں مبینہ ناکامی کا الزام عائد کیا گیا تھا۔

لیکن فیڈرل پراسیکیوٹرز نے 2021 کے آخر میں الزامات کو مسترد کر دیا جب جوڑے نے پہلے کے قانونی معاہدے کے حصے کے طور پر کمیونٹی سروس کا کام مکمل کر لیا۔ (اے ایف پی)



Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں