10

پی ٹی آئی نے ای سی پی کو اپنے ایم این ایز کو ڈی نوٹیفائی نہ کرنے کے لیے کہا

اسلام آباد میں الیکشن کمیشن کی عمارت۔  ای سی پی کی ویب سائٹ
اسلام آباد میں الیکشن کمیشن کی عمارت۔ ای سی پی کی ویب سائٹ

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) نے الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) سے درخواست دائر کردی۔ اپنے 45 ایم این ایز کو ڈی نوٹیفائی نہیں کر رہے۔ چاہے قومی اسمبلی کے سپیکر ان کے استعفے قبول کر لیں کیونکہ انہوں نے قومی اسمبلی میں حقیقی اپوزیشن کا کردار ادا کرنے کے لیے استعفے واپس لے لیے تھے۔

پی ٹی آئی کے اراکین اسمبلی نے ای سی پی سیکریٹریٹ کا دورہ کیا اور وہاں موجود سیکیورٹی اہلکاروں نے ان کے لیے مین انٹری گیٹ بند پایا۔ تاہم پی ٹی آئی کے دو رکنی وفد جس میں پی ٹی آئی رہنما عامر ڈوگر اور ریاض فتیانہ شامل تھے کو الیکشن کمیشن میں داخلے کی اجازت دی گئی۔ انہوں نے چیف الیکشن کمشنر اور ای سی پی ارکان سے بھی ملاقات کی۔

اس موقع پر اے پی ٹی آئی ایم این ایز کی جانب سے باقاعدہ درخواست جمع کرائی گئی۔ جس میں ان کا کہنا تھا کہ وہ قومی اسمبلی کے 45 ارکان کی درخواست واپس لے رہے ہیں اور اپنے استعفے واپس لینے سے متعلق سپیکر اور قومی اسمبلی سیکرٹریٹ کو آگاہ کر دیا ہے۔ انہوں نے یہ بھی لکھا کہ اگر قومی اسمبلی کے سپیکر نے ان کے استعفے منظور کر لیے تب بھی انہیں بطور ایم این اے ڈی نوٹیفائی نہیں کیا جانا چاہیے۔ بعد ازاں الیکشن کمیشن سیکرٹریٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ریاض فتیانہ نے کہا کہ 45 ایم این ایز نے استعفے واپس لے لیے ہیں۔جیسا کہ وہ اسمبلی کے اندر حقیقی اپوزیشن بننا چاہتے تھے۔ قومی اسمبلی میں پی ٹی آئی کے سابق چیف وہپ عامر ڈوگر نے وضاحت کی کہ انہوں نے الیکشن کمیشن کے سیکرٹری کو خط لکھا ہے کہ ان کے 45 ارکان نے استعفے واپس لے لیے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ انہوں نے آج (پیر) چیف الیکشن کمشنر اور چاروں ارکان سے ملاقات کی تھی اور اس سے قبل بھی اسمبلی گئے تھے لیکن اسمبلی کے دروازے بند تھے اور پھر قومی اسمبلی کے سپیکر کی سرکاری رہائش گاہ پر گئے لیکن داخلہ بند تھا۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے اپنا کیس چیف الیکشن کمشنر اور چار ممبران کے سامنے پیش کیا۔



Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں