15

وزیراعلیٰ ڈینگی کے مجوزہ ایکشن پلان پر عملدرآمد چاہتے ہیں۔

پشاور: نگراں وزیراعلیٰ محمد اعظم خان نے بدھ کے روز محکمہ صحت کو ہدایت کی ہے کہ موجودہ سیزن کے دوران وائرس کے ممکنہ پھیلاؤ کو روکنے کے لیے مجوزہ ڈینگی ایکشن پلان پر سختی سے عمل درآمد کو یقینی بنایا جائے۔

وہ یہاں محکمہ صحت کے اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔ وزیر اعلیٰ کے مشیر برائے صحت ڈاکٹر عابد جمیل، چیف سیکرٹری امداد اللہ بوسال اور دیگر متعلقہ محکموں کے افسران نے اجلاس میں شرکت کی۔

وزیراعلیٰ نے صحت کو حکومت کا ترجیحی شعبہ قرار دیتے ہوئے محکمہ خزانہ کو ہدایت کی کہ ہسپتالوں میں ہنگامی ادویات کی خریداری اور دیگر ضروری خریداریوں کے لیے مطلوبہ فنڈز کی بروقت فراہمی کو یقینی بنایا جائے۔

انہوں نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ صحت کے شعبے میں زیر تکمیل منصوبوں کی بروقت تکمیل کو یقینی بنایا جائے اور اس مقصد کے لیے مطلوبہ فنڈز ترجیحی بنیادوں پر فراہم کیے جائیں۔

انہوں نے متعلقہ حلقوں سے کہا کہ وہ پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے تحت کام کرنے والے ہسپتالوں کو ادائیگیوں کے حوالے سے جاری انکوائری مکمل کریں اور واضح کیا کہ اس عمل سے ان ہسپتالوں میں خدمات کی فراہمی متاثر نہیں ہونی چاہئے اور مریضوں کو کسی قسم کی تکلیف کا سامنا نہیں کرنا چاہئے۔

وزیراعلیٰ نے انہیں لشمینیا اور دیگر متعدی بیماریوں پر قابو پانے کے لیے ٹھوس اقدامات کرنے کی بھی ہدایت کی۔

انہوں نے متعلقہ حکام پر زور دیا کہ وہ انضمام شدہ علاقوں میں صحت کے شعبے میں خدمات کی فراہمی کو بہتر بنانے پر خصوصی توجہ دیں تاکہ ان کے دروازے پر صحت کی سہولیات کی فراہمی کو یقینی بنایا جا سکے۔ اسی طرح، وزیراعلیٰ نے آباد اضلاع کے اطراف میں صحت کی خدمات کی فراہمی کے آؤٹ لیٹس میں خدمات کی فراہمی کو بہتر بنانے کے لیے عملی اقدامات کرنے پر زور دیا جس کا مقصد مقامی سطح پر لوگوں کو علاج معالجے کی سہولیات کو یقینی بنانا اور تیسرے درجے کی صحت کی سہولیات کی طرف مریضوں کی آمد کو کم سے کم کرنا ہے۔

قبل ازیں وزیراعلیٰ کو ادارہ جاتی اصلاحات، انتظامی امور، ترقیاتی منصوبوں پر عملدرآمد، دستیاب فنڈز کی صورتحال اور محکمہ صحت کے دیگر متعلقہ امور کے بارے میں بریفنگ دی گئی۔

میٹنگ میں صحت کارڈ پروگرام اور میڈیکل ٹیچنگ انسٹی ٹیوشنز سے متعلق امور پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ فیصلہ کیا گیا کہ MTIs اور صحت کارڈ سکیم کے معاملات کو مزید ہموار کرنے کے لیے ایک الگ اجلاس بلایا جائے گا۔ وزیراعلیٰ نے صحت کارڈ پروگرام کو عوامی فلاح کا ایک اچھا اقدام قرار دیتے ہوئے کہا کہ صحت کارڈ کے پورے عمل کو شفاف اور موثر بنایا جائے گا تاکہ اس پروگرام کے زیادہ سے زیادہ ثمرات عوام تک پہنچ سکیں۔

اعظم خان نے واضح کیا کہ اس سلسلے میں تمام فیصلے خالصتاً میرٹ اور بہترین عوامی مفاد میں کیے جائیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ نگران حکومت مکمل طور پر غیر جانبدار ہے اور اس کے تمام فیصلے عوامی فلاح پر مبنی ہوں گے۔



Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں