9

ملک کے لیے جان، سیاسی سرمایہ قربان کرنے کو تیار ہیں، وزیراعظم

اسلام آباد:


وزیر اعظم شہباز شریف نے ملک کو بگڑتے ہوئے معاشی بحران سے نکالنے کے عزم کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ پاکستان کی خاطر اپنا سیاسی سرمایہ اور جان بھی قربان کرنے کو تیار ہیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کو اسلام آباد میں وزیراعظم یوتھ بزنس اینڈ ایگری لونز سکیم کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

یہ پروگرام نوجوانوں کو مختلف کاروبار اور زراعت کے اقدامات کے ذریعے اپنی روزی روٹی کمانے کے مواقع فراہم کرے گا۔

اس بات کو تسلیم کرتے ہوئے کہ پاکستان مشکل وقت سے گزر رہا ہے، وزیر اعظم نے یہ بھی کہا کہ معاشرے کے اشرافیہ اور امیر طبقے کو بھی "ملک کے لیے قربانیاں دینا ہوں گی”۔

انہوں نے کہا کہ میں تین بار پنجاب کا وزیراعلیٰ رہ چکا ہوں اور اب ملک کے موجودہ وزیراعظم کی حیثیت سے خدمات انجام دے رہا ہوں، اگر ان مسائل پر توجہ نہیں دی گئی تو ہم اپنے پیچھے کون سی میراث چھوڑیں گے؟ یہ واضح ہے کہ پاکستان کو بہت بڑے چیلنجز کا سامنا ہے، اور اگر ہم نے ذمہ داری لی تو ہم ملک کو مشکلات سے نکالنے کے لیے اپنی آخری کوشش کریں گے۔‘‘

یہ بھی پڑھیں: پاکستان تیزی سے معاشی بدحالی کی طرف بڑھ رہا ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ پاکستانیوں، سیاستدانوں اور مسلمانوں کی بطور مشکل صورتحال کا جواب دینا ان کی اجتماعی ذمہ داری ہے، انہوں نے مزید کہا کہ وہ ملک کے لیے اپنی جان قربان کرنے سے بھی باز نہیں آئیں گے۔

انہوں نے کہا کہ اس راستے میں مسائل جنم لیں گے، لیکن انہیں تکلیفیں اٹھانی ہوں گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ معاملات کے دائرے میں رہنے والے لوگوں، سیاستدانوں اور امیروں کو ایک مثال قائم کرنی ہوگی، کیونکہ غریبوں پر مہنگائی کا بوجھ ڈالنا اور امیروں اور اشرافیہ کو ملکی قرضوں پر مزے کرنے دینا ناانصافی ہے۔

آج سے شروع کیے گئے پروگرام کے تحت نوجوانوں کو آسان اقساط اور نرم شرح سود پر 75 لاکھ روپے تک کے قرضے فراہم کیے جائیں گے۔ 500,000 روپے تک کے قرض کی رقم سود سے پاک ہوگی۔

وزیر اعظم نے امید ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ نوجوانوں میں صلاحیت اور ٹیلنٹ ہے اور وہ مل کر پاکستان کو موجودہ بحرانوں سے نکالیں گے۔

انہوں نے ان کی تعریف ’’ملک کے افق پر چمکتے ستارے‘‘ کے طور پر کی۔

وزیراعظم نے کہا کہ ملکی مسائل کو حل کرنے کی اولین ذمہ داری حکومت پر عائد ہوتی ہے۔

وزیر اعظم نے مزید کہا کہ انہوں نے مشکل ترین دور میں حکومت سنبھالی لیکن ان تمام آزمائشوں کے باوجود پاکستان کو مضبوط بنانے کے لیے ان کا عزم مزید مضبوط ہوا۔



Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں