11

اے کے ایف کے بے مثال رضاکاروں کو خراج تحسین پیش کیا گیا۔

پشاور: صوبہ بھر کے ہزاروں رضاکاروں کو خراج تحسین پیش کرنے کے لیے جنہوں نے ملک میں حالیہ سیلاب اور دیگر قدرتی آفات کے دوران شاندار خدمات سرانجام دیں، ایک روزہ رضاکاروں کا کنونشن بعنوان "دی میچ لیس” کا انعقاد کیا گیا۔ منگل کو یہاں الخدمت فاؤنڈیشن خیبر پختونخوا کے زیراہتمام۔

پروگرام میں صوبہ بھر سے الخدمت فاؤنڈیشن کے ہزاروں رضاکاروں نے شرکت کی۔

الخدمت فاؤنڈیشن کے صوبائی صدر خالد وقاص کی زیر صدارت منعقدہ کنونشن کے پہلے سیشن میں سرکاری و نجی تعلیمی اداروں کے طلبہ اور اساتذہ نے شرکت کی جنہوں نے قومی سانحات کے دوران امدادی سرگرمیوں میں حصہ لیا تھا۔

ابتدائی سیشن میں جماعت اسلامی خیبر پختونخوا کے امیر پروفیسر محمد ابراہیم خان اور میڈیا کے نمائندوں بشمول محمود جان بابر، فرزانہ علی، ڈاکٹر یوسف علی، پشاور پریس کلب کے صدر ارشد عزیز ملک، لہر علی اور دیگر نے فلاح و بہبود کے حوالے سے تفصیلی معلومات فراہم کیں۔ الخدمت فاؤنڈیشن کی سرگرمیاں

کنونشن کے دوسرے سیشن کی صدارت فاؤنڈیشن کے مرکزی صدر پروفیسر ڈاکٹر حفیظ الرحمن نے کی اور مرکزی امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق مہمان خصوصی تھے۔

اس موقع پر جماعت اسلامی کے نائب صدر ڈاکٹر مشتاق مانگٹ، اراکین صوبائی اسمبلی عنایت اللہ خان، ریحانہ اسماعیل، شگفتہ ملک، جماعت اسلامی کے صوبائی جنرل سیکرٹری عبدالوصی، بحر اللہ خان ایڈووکیٹ، ڈاکٹر محمد اقبال خلیل اور حافظ حشمت خان، محمد شاکر صدیقی اور دیگر نے شرکت کی۔ اجلاس میں شرکت کی.

اس موقع پر الخدمت فاؤنڈیشن کے رضاکاروں کو حالیہ ملک گیر سیلاب اور دیگر قدرتی آفات کے دوران ان کی بے لوث خدمات پر خراج تحسین پیش کیا گیا۔

اس بات کا اعتراف کیا گیا کہ پاکستان میں جب بھی ناگہانی آفات آتی ہیں تو الخدمت کے رضاکار متحرک ہو جاتے ہیں اور ریسکیو اور ریلیف سرگرمیوں میں فوری حصہ لیتے ہیں۔

فاؤنڈیشن کے شمالی وزیرستان چیپٹر کے شہید صدور انجینئر اسد اللہ، صدر الخدمت فاؤنڈیشن مردان فرمان علی اور جنرل سیکرٹری کالام بحرین مولانا ایاز خان خیل اور ایمبولینس ڈرائیور اعظم خان کو کورونا وائرس اور دیگر آفات کے دوران بے لوث خدمات پر شاندار خراج عقیدت پیش کیا گیا۔

الخدمت فاؤنڈیشن کے یہ ہیروز کورونا اور دیگر امدادی سرگرمیوں کے دوران شہید ہوئے۔

اس موقع پر شہداء کے ورثاء کو اعترافی خدمات کی شیلڈز سے بھی نوازا گیا جبکہ کنونشن میں کورونا، سیلاب اور دیگر حادثات و آفات میں بہترین خدمات سرانجام دینے والے رضاکاروں کو یادگاری شیلڈز اور اسناد بھی دی گئیں۔



Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں