6

اس بار کورونا ختم ہونے سے پہلے ہیضے کا ڈراؤنا خواب! یہ وبا 26 ممالک میں پھیل چکی ہے، ہلاکتوں کی تعداد میں روز بروز اضافہ ہو رہا ہے۔



ملاویترکی میں ہیضے کی وبا سے ہونے والی اموات کی تعداد میں تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے۔ ملاوی کی وزارت صحت کے اعداد و شمار کے مطابق مارچ 2022 میں پھیلنے والی ہیضے کی وبا میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 12 افراد ہلاک ہوئے اور 626 نئے کیسز سامنے آئے۔

تقریباً 20 ملین افراد پر مشتمل ملک میں کیسز کی مجموعی تعداد 29 ہزار 995 تک پہنچ گئی جبکہ جان کی بازی ہارنے والوں کی تعداد 1002 ہوگئی۔ وزیر صحت کھمبیز کانڈوڈو چپونڈا نے عوام سے مطالبہ کیا کہ وہ حفظان صحت کے اصولوں پر توجہ دیں اور صاف پانی کا استعمال کریں۔

ہیضہ، چھوٹی آنت کی ایک متعدی بیماری "Vibrio cholerae” کے جراثیم سے ہونے والی بیماری، متاثرہ شخص میں پانی کے اسہال، قے اور پٹھوں میں درد جیسی علامات کے ساتھ خود کو ظاہر کر سکتا ہے۔

عالمی صحت کے اداروں اور حکومتوں کے اقدامات کے نتیجے میں ہیضے کے کیسز جو برسوں سے کم ہو رہے تھے، موسمیاتی تبدیلیوں، غربت اور تنازعات جیسی وجوہات کی وجہ سے دوبارہ پھیلنا شروع ہو گئے ہیں۔

ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (ڈبلیو ایچ او) کے اعداد و شمار کے مطابق جہاں 2017 سے 2021 تک دنیا بھر میں ہیضے کے مریضوں کی تعداد 20 سے کم تھی وہیں 2022 میں ہیضے کی وبا صرف 26 ممالک میں دیکھی گئی۔

ماخذ: AA/ دنیا

کورونا وائرس ملاوی دنیا کرنٹ خبریں



Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں