15

اسپیکر قومی اسمبلی کے اقدام نے عمران کو حیرت میں ڈال دیا۔

اسلام آباد: قومی اسمبلی کے اسپیکر راجہ پرویز اشرف نے پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان اور ان کے معاونین کو یہ اعلان کر کے حیران کر دیا کہ انہوں نے پی ٹی آئی کے 35 ایم این ایز کے استعفے منظور کر لیے ہیں۔

زمان پارک لاہور میں موجود پی ٹی آئی کے ذرائع نے ‘دی نیوز’ کو بتایا کہ عمران حیران ہیں کہ ان کے معاونین اسپیکر کے فیصلے کے بارے میں پہلے سے جاننے میں کیسے ناکام رہے۔

امکان تھا کہ عمران خان صدر عارف علوی سے وزیراعظم شہباز شریف سے اعتماد کا ووٹ مانگنے کے لیے کہہ سکتے ہیں، جس میں ناکامی پر قائد ایوان/وزیراعظم کا نیا انتخاب ہونا تھا۔

پی ٹی آئی رہنماؤں کو توقع تھی کہ حکومت کا ساتھ دینے والے تقریباً ایک درجن اراکین ووٹنگ کے لیے نہیں آئیں گے۔ عمران نے منصوبہ بنایا تھا، اور تین دن پہلے اس کے بارے میں واضح اشارہ دے دیا تھا، تاکہ اپنے نامزد کردہ شخص کو وزیر اعظم منتخب کرایا جا سکے جو اس کے بعد قومی اسمبلی کو تحلیل کر کے عام انتخابات کی راہ ہموار کر دے گا۔

اس نمائندے نے بدھ کی شام پی ٹی آئی کے سیکنڈ ان کمانڈ پی ٹی آئی شاہ محمود قریشی اور عمران کے چیف آف اسٹاف سینیٹر شبلی فراز سے اس واقعہ پر ان کے تبصروں کے لیے رابطہ کیا لیکن انہوں نے کوئی جواب نہیں دیا۔

دریں اثناء قومی اسمبلی کے سپیکر راجہ پرویز اشرف جنہوں نے مولانا فضل الرحمن، آصف علی زرداری، سردار ایاز صادق اور رانا ثناء اللہ خان سمیت پی ڈی ایم کی قیادت سے مشاورت کی، نے اس ساری حکمت عملی کو اس قدر خفیہ رکھا کہ سپیکر سیکرٹریٹ کے سینئر سٹاف کو بھی پتہ چل گیا۔ ذرائع نے مزید کہا کہ اس کے بارے میں صرف اس وقت جب انہیں الیکشن کمیشن آف پاکستان (ECP) کی جانب سے پی ٹی آئی کے ارکان کو ڈی نوٹیفائی کرنے کا نوٹیفکیشن منگل کی دوپہر کو موصول ہوا۔



Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں